December Ko Rukhsat Karen


Sindhi Chhokro2022/01/03 07:00
Follow

--آؤ کہ دسمبر کو رخصت کریں۔۔ کچھ خوشیوں کو سنبھال کر کچھ آنسوؤں کو ٹال کر، جو لمحے گزرے چاہتوں میں جـو پل بیتے رفاقتـوں میں کبھی وقت کے ساتھ چلتے چلتے جو تھک کے رکے رستوں میں کبھی خوشیوں کی امید مِلی کبھی بچھڑے ہوؤں کی دید مِلی کبھی بے پناہ مسکرا دیے

Follow

--آؤ کہ دسمبر کو رخصت کریں۔۔

کچھ خوشیوں کو سنبھال کر

کچھ آنسوؤں کو ٹال کر،

جو لمحے گزرے چاہتوں میں

جـو پل بیتے رفاقتـوں میں

کبھی وقت کے ساتھ چلتے چلتے

جو تھک کے رکے رستوں میں

کبھی خوشیوں کی امید مِلی

کبھی بچھڑے ہوؤں کی دید مِلی

کبھی بے پناہ مسکرا دیے

کبھی ہنستے ہنستے رو دیے

ان سارے لمحوں کو مختصر کریں

آؤ کہ دسمبر کو رخصت کریں💕

Follow

Support this user by tipping bitcoin - How to tip bitcoin?

Send bitcoin to this address

Comment (0)

Advertisements